ثنااللہ زہری، عبدالقادر بلوچ اور قریبی رفقا نےپاکستان پیپلز پارٹی میں شمولیت کا باضابطہ فیصلہ لے لیا



نواب ثنا اللہ زہری، جنرل (ر) عبدالقادر بلوچ اور ان کے رفقا نے پیپلز پارٹی میں شمولیت کا باضابطہ فیصلہ کیا، باقاعدہ شمولیت کا اعلان آئندہ چند روز میں مرکزی قیادت کے ساتھ کنونشن میں کیا جائے گا۔

اجلاس میں عبدالقادر بلوچ نے مختلف سیاسی جماعتوں میں شمولیت کے بارے میں اجلاس کے شرکا سے رائے طلب کی، ثنا اللہ زہری کا کہنا تھا کہ کچھ لوگ ڈرائنگ روم میں فیصلے کرتے ہیں،
ہم عوامی لوگ ہیں اپنے لوگوں کو اہمیت دیتے ہیں اوراپنے لوگوں کی مشاورت سے فیصلے کرتے ہیں۔

ثنا اللہ زہری نے کہا میں پی پی شریک چیئرمین آصف علی زرداری اور چیئرمین بلاول بھٹو کی جانب سے دعوت دیے جانے پر مشکور ہوں۔

انھوں نے نواز شریف پر شدید تنقید کی، اور انھیں فطرتاً دھوکے باز قرار دیاہے، کہا نواز شریف نے ہمیں دھوکا دیاہے، ہم نے نواز شریف اور ان کی بیٹی کو بہت عزت دی اور چھوڑا نہیں، لیکن نواز شریف کی فطرت میں وفا کرنا نہیں ہے، ہم پیپلز پارٹی سے اسی دن سے رابطے میں تھے، امید ہے کہ آصف زرداری اور بلاول بھٹو عزت دیں گے۔

نواب ثنا اللہ زہری نے اجلاس میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا ہم اپنی جماعت بنانے کا سوچ رہے تھے، اور ہم اپنی سیاسی جماعت بنانے کی بھی صلاحیت رکھتے ہیں۔ عبد القادر بلوچ نے اجلاس میں کہا کہ پیپلز پارٹی نے ہمیں شمولیت کی دعوت دی ہے، زرداری صاحب کو کہا کہ عزت کریں گے اپنی بے عزتی برداشت نہیں کریں گے۔

عبدالقادر بلوچ کا کہنا تھا کہ انھیں غیر مشروط طور پر شامل ہونے کا کہا گیا ہے مگر ہم پوزیشن چاہتے ہیں۔
انھوں نے ن لیگ کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا یہ وہ جماعت ہے جس نے ہمارے خواتین کی بے عزتی کی، 10 ماہ ہوگئے لیکن پارٹی چھوڑنے کے بعد کسی نے پوچھنے کی زحمت نہیں کی، ہمیں بی اے پی میں جانے اور چیف ایگزیکٹو بننے کی آفر تھی لیکن رد کر دیا۔

Facebook Comments
50% LikesVS
50% Dislikes